لپ ا سٹک کا استعمال ایک آرٹ

169

ہونٹ انسانی چہرے کا سب سے زیادہ حساس پر کشش اور خوب صورت حصہ ہیں۔اس لئے شاعروں نے ہونٹوں کو گلاب کی پنکھڑیوں سے تعبیر دی ہے۔ہونٹوں کا ایک فطری حسن ہوتاہے اور ان پر لپ اسٹک کی تہہ اسے حسن دو آتشہ بنا دیتی ہے۔لیکن اس دو آتشی حسن کا اعضا انحصار اس بات پر ہے کہ آپ اپنے ہونٹوں پر لپ اسٹک لگاتی کس طرح ہیں اور آپ جو لپ اسٹک لگاتی ہیں وہ ہونٹوں پر کس حد تک سجتی ہے ۔

یہاں ہم آپ کو لپ اسٹک لگانے کے اور ہونٹوں کو دلکش بنانے کا اہم نکات بتاتے ہیں۔ ہونٹوں کو گلابی یا سرخی رکھنے کا رواج زمانہ قدیم سے پایا جاتاہے۔پہلے اس کام کے لئے مسمی یا ونداسہ استعمال کیا جاتا تھا لیکن اب مارکیٹ میں انواع واقسام کی لپ اسٹک اور چپ اسٹک وغیرہ موجود ہیں۔ ہونٹوں کو خوبصورت اور جاذب نظر بنائے رکھنے کے لئے لپ اسٹک لگانا چاہیے یا نہیں۔ اس بارے میں دو نظریات ہیں اور دونوں ہی انتہا پسندی کی حدوں(کی حد)کو چھوتے نظر آتے ہیں۔ایک نظریہ ہے کہ ہونٹ بالکل سادہ بغیر کسی قسم کی لپ اسٹک کے ہونے چاہیے جب کہ دوسرا گروپ اس بات کی تائید کرتاہے کہ ہونٹوں پر لپ اسٹک کی تہیں انہیں خوب سے خوب تر بناتی ہیں۔اس لئے لپ اسٹک کا استعمال ناگزیر ہے۔ہر نوجوان لڑکی کے لب سولہ سال کی عمر تک پہنچنے کے بعد کسی نہ کسی حد تک لپ اسٹک لگائی جائے تو بہت اچھی لگتی ہے۔ اگر لپ اسٹک لگانا ممکن نہ ہوتو لپ گلوز ہی لگا کر ہلکا سا گلابی پن کا تاثر دے۔ لپ اسٹک یا لپ گلوز لگانے کا سب بڑا فائدہ یہ ہے کہ ان کی بدولت ہونٹوں کو موسچرائز مہیا ہو جاتاہے ۔دوسرا فائدہ یہ ہے کہ ہونٹوں پر چمک پیدا ہوتی ہے۔میک اپ کرنے کے بعد اگر ہونٹوں پر لپ اسٹک نہ لگائی جائے تو چہرہ ادھورا اور نامکمل سا لگتاہے ۔یوں لگتاہے جیسے میک اپ کرتے کرتے اچانک آپ میک اپ چھوڑ کر کسی اور کام میں مصروف ہو گئی ہوں کچھ خواتین لپ اسٹک ہونٹوں پر خوب گہرا گہرا تھوپ لیتی ہیں۔ ان کا خیال ہوتاہے کہ جب تک لپ اسٹک کی موٹی موٹی تہیں نہ جمائی جائیں اس وقت تک ہونٹوں پر خوبصورتی کا تاثر قائم نہیں ہوتا۔لپ اسٹک خریدنا بھی ایک فن ہے۔آپ جو بھی جب بھی لپ اسٹک خریدیں تو کسی برینڈ کی خریدیں۔اگر آپ خوبصورت دہانے کی مالک ہیں تو آپ منحصر ہے کہ آپ لپ اسٹک سے خط کھینچیں یا نہ کھینچیں۔کیونکہ اس صورت میں آپ کے ہونٹوں کی اپنی آؤٹ لائن کافی ہو گئی ۔ آپ اس پر برش یا لپ اسٹک سے رنگ بھر سکتی ہیں۔ لیکن اگر آپ کا دہانہ اچھا نہیں اور ہونٹوں کے خطوط زیادہ واضح نہیں تو یہ ضروری ہے کہ آپ لپ اسٹک لگانے سے قبل لپ پنسل سے پہلے ہونٹوں کے گرد آوٹ لائن بنائیں پھر اس آؤٹ لائن کے اندر لپ اسٹک لگائیں۔آؤٹ لائن بنانے کے لئے جو لپ اسٹک پنسل یا لپ اسٹک برش استعمال کریں اس کا رنگ آپ کی اس لپ اسٹک کے رنگ سے قدرے گہرا ہونا چاہیے آپ ہونٹوں پر لگائیں گی۔کچھ کھانے پینے کے بعد ہونٹوں پر لپ اسٹک اتر جاتی ہے اور ہونٹ برے لگتے ہیں۔ آپ اپنے ہونٹوں پر لپ اسٹک کے بدلے پٹرولیم جیلی بھی لگا سکتی ہیں اس سے ہونٹ لپ اسٹک ہی کی طرح نرم اور چمکدار رہتے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

urUrdu
en_GBEnglish urUrdu