پی ٹی آئی کے سینئر رہنما نعیم الحق انتقال کر گئ

124

کراچی: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما اور وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور نعیم الحق انتقال کر گئے۔

پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما نعیم الحق کینسر جیسی موذی بیماری میں مبتلا تھے اور کافی عرصے سے علاج کے لیے ہسپتال میں داخل تھے۔

آج پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سینئر رہنما نعیم الحق کو طبیعت بگڑنے پر آغاز خان ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ کینسر سے لڑتے لڑتے زندگی کی بازی ہار گئے۔ ان کے انتقال کی تصدیق تحریک انصاف کے رہنما فواد چودھری نے ٹویٹر پر کی۔

Ch Fawad Hussain

@fawadchaudhry

Naeem Ul Haq fought like a lion aagainstt Cancer, a friend, elder and a colleague …. will always be missed… may Allah Rest his soul in peace

3,630 people are talking about this

وفاقی وزیر فواد چودھری نے ٹویٹ میں کہا کہ تحریک انصاف کے رہنما نعیم الحق انتقال کر گئے ہیں۔ انہوں نے لکھا کہ پی ٹی آئی کے سینئر رہنما نے شیروں کی طرح کینسر کی بیماری کا مقابلہ کیا۔ ایک دوست اور بڑے ساتھی کو ہمیشہ یاد رکھیں گے، اللہ تعالیٰ نعیم الحق کی بخشش فرمائے۔

 یہ بھی پڑھیں: پی ٹی آئی رہنما نعیم الحق کون تھے؟

عمران خان کا کہنا تھا کہ نعیم الحق کی انتقال سے نہ پر ہونے والا خلا پیدا ہوگیا ہے۔ کینسر کے خلاف نعیم الحق کو کینسز کے خلاف ہمت و حوصلے سے لڑتے ہوئے دیکھا، آخری وقت تک نعیم الحق پارٹی امور میں سرگرم رہے۔

Imran Khan

@ImranKhanPTI

Am devastated by one of my oldest friend Naeem’s passing. He was one of the 10 founding mbrs of PTI & by far the most loyal. In 23 yrs of PTI’s trials & tribulations, he stood by me. He was always there for support whenever we were at our lowest ebb.

Imran Khan

@ImranKhanPTI

In the last two years I saw him battle cancer with courage and optimism. Till the very end he was involved in Party affairs and attended cabinet meetings as long as he was able. His passing has left an irreplaceable void.

4,249 people are talking about this

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ نعیم الحق کے انتقال پر انتہائی دکھ و رنج ہے۔ نعیم الحق پی ٹی آئی کے 10 بانی ممبران میں سے ایک تھے۔ وہ پی ٹی آئی کے ساتھ ہمیشہ مخلص و وفادار رہے۔

Imran Khan

@ImranKhanPTI

Am devastated by one of my oldest friend Naeem’s passing. He was one of the 10 founding mbrs of PTI & by far the most loyal. In 23 yrs of PTI’s trials & tribulations, he stood by me. He was always there for support whenever we were at our lowest ebb.

9,468 people are talking about this

ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی 23 سالہ جدوجہد میں ہر مشکل میں نعیم الحق میرے ساتھ رہا۔ 2سال سے میں اسے حوصلے اور جرات کے ساتھ کینسرسے لڑتے دیکھ رہا تھا۔ آخر تک وہ پارٹی معاملات میں شریک تھے۔ نعیم الحق نےجب تک ہوسکا کابینہ میٹنگزمیں شرکت کی۔ ان کے جانے سے پیداہونے والا خلا کبھی پورا نہیں ہوگا۔ 

دوسری طرف گورنر سندھ عمران اسماعیل نے پی ٹی آئی سینئر رہنما کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ نعیم الحق عمران خان کے دکھ، سکھ کے ساتھی رہے، نعیم الحق کینسر جیسے موذی مرض کے ہاتھوں شکست کھاگئے۔

Dr. Firdous Ashiq Awan@Dr_FirdousPTI

نعیم الحق صاحب کے انتقال پرگہرے دکھ ہوا ۔وہ وزیراعظم عمران خان کے دیرینہ ساتھی اور پارٹی کا عظیم اثاثہ تھے،ان کے انتقال سےپیدا ہونے والاخلاآسانی سے پر نہیں ہوگا،انہوں نے بیماری کااستقامت اور حوصلے سے مقابلہ کیا۔اللہ تعالیٰ ان کو جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائے،لواحقین کوصبر جمیل دے۔

356 people are talking about this

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ نعیم الحق صاحب کے انتقال پرگہرے دکھ ہوا ۔وہ وزیراعظم عمران خان کے دیرینہ ساتھی اور پارٹی کا عظیم اثاثہ تھے،ان کے انتقال سےپیدا ہونے والاخلاآسانی سے پر نہیں ہوگا،انہوں نے بیماری کااستقامت اور حوصلے سے مقابلہ کیا۔اللہ تعالیٰ ان کو جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائے،لواحقین کوصبر جمیل دے۔

Tehreek-e-Insaf

@InsafPK

A good political colleague and an even better friend, @naeemul_haque will always be remembered. May Allah bless him in the highest ranks of Jannah & grant patience to his family. The PTI Family is in extreme sorrow to know of Naeem ul Haq’s sad demise.

122 people are talking about this

Senator Sarfraz Bugti

@PakSarfrazbugti

Sad to hear about Naeem ul Haque sahib. He fought a long, brave battle against cancer May his soul Rest In Peace Prayers for his family

49 people are talking about this

Shehbaz Sharif

@CMShehbaz

Very sad to hear about the passing away of Naeem-ul-Haq. My profound condolences to the bereaved family and the PTI. May Allah rest his soul in peace!

إِنَّا لِلّهِ وَإِنَّـا إِلَيْهِ رَاجِعونَ

1,734 people are talking about this

دریں اثناء چیئر مین سینیٹ صادق سنجرانی نے نعیم الحق کے انتقال پر اظہار افسوس کیا اور کہا کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا کرے، نعیم الحق کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا، نعیم الحق کینسر جیسے مرض سے شیر کی طرح لڑے۔

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے نعیم الحق کے انتقال پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نعیم الحق کے انتقال کا سن کر شدید دکھ ہوا، ان کے پارٹی کیلئے بیش بہا خدمات تھے، خدمات کو ہمیشہ یاد رکھیں گے، دکھ کی گھڑی میں مرحوم کے لواحقین کےساتھ کھڑے ہیں، نعیم الحق بہترین ساتھی اور بہادر کارکن تھے۔

یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما نعیم الحق وزیراعظم عمران خان کے کافی دیرینہ دوست تھے، وزیراعظم عمران خان نے کراچی کے دورے کے دوران ان کے گھر جا کر عیادت کی تھی۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما اور وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور نعیم الحق 70 برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔ نعیم الحق کون تھے آیئے ان کے بارے میں بتاتے ہیں۔

نعیم الحق 11 جولائی 1949ء کو کراچی میں پیدا ہوئے، پیشے کے اعتبار سے بینکر اور کاروباری شخصیت تھے۔ تحریک انصاف کے بانی رکن سمجھے جاتے تھے۔ جامعہ کراچی سے انگلش لٹریچرمیں ماسٹرز کیا۔

ایس ایم لاء کالج سے ایل ایل بی کیا، نیویارک کے یو این پلازہ میں نیشنل بینک کی شاخ قائم کرنےوالی ٹیم کا حصہ بھی رہے، 1980ء میں بطور مرچنٹ بینکر لندن میں رہائش اختیار کرلی۔

ایروایشیا کمپنی کے مینجنگ ڈائریکٹر اور میٹروپولیٹن سٹیل کے چیئرمین بھی رہے۔ 80 کی دہائی میں لندن قیام کے دوران عمران خان سے ملاقات ہوئی جو گہری دوستی میں بدل گئی۔

1984ء میں انہوں نے ایئرمارشل اصغرخان کی تحریک استقلال جوائن کی اور کراچی آگئے۔ 1988ء میں تحریک استقلال کے ٹکٹ پر اورنگی سے الیکشن بھی لڑا۔

1996ء میں عمران خان کے ساتھ تحریک انصاف کی بنیاد رکھی۔ 2008ء میں کینسر کے باعث اہلیہ کے انتقال کے بعد نعیم الحق نے توجہ تحریک انصاف کی جانب مرکوز کردی۔

25دسمبر 2011ء کو کراچی میں ہونے والے عظیم الشان جلسے کا کریڈٹ بھی نعیم الحق کو جاتا ہے جس نے تحریک انصاف کو قومی سیاسی جماعتوں کی صف میں کھڑا کردیا۔

2012ء میں نعیم الحق تحریک انصاف چیئرمین کے چیف آف سٹاف بن کر اسلام آباد منتقل ہو گئے۔ پارٹی کی کور کمیٹی کا حصہ اور انفارمیشن سیکریٹری بھی رہے۔

جنوری 2018ء میں نعیم الحق کو خون کےسرطان کا مرض تشخیص کیا گیا جس کے علاج کےدوران ہی وہ عام انتخابات کےلیے اپنا کردار ادا کرتے رہے انتخابات میں کامیابی کے بعد نعیم الحق وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور مقرر ہوئے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

urUrdu
en_GBEnglish urUrdu