دھرنے میں پی ٹی آئی کا سہولت کار ہونے کا الزام

دھرنے میں پی ٹی آئی کا سہولت کار ہونے کا الزام لگنے پر چوہدری نثار نے سخت جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

52

ٹیکسلا:(اوصاف ٹی وی) دھرنے میں پی ٹی آئی کا سہولت کار ہونے کا الزام لگنے پر چوہدری نثار نے سخت جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ سابق وزیر داخلہ دو روز میں لیگی رہنما جاوید لطیف کے بیان پر وضاحتی بیان جاری کریں گے۔تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ (ن) نے سابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کو 2014ء کے تحریک انصاف کے دھرنے کا سہولت کار قرار دے دیا تھا جس پر چوہدری نثار نے کوئی ردِ عمل نہیں دیا تھا تاہم اب جنگ اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ معتبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان مسلم لیگ ن کے رہنما میاں جاوید لطیف کی جانب سے پی ٹی آئی کے اسلام آباد میں دھرنے میں سہولت کار کا کردار ادا کرنے کے الزام کا ایک دو روز میں جواب دیں گے۔

یہ بات چوہدری نثار کے قریبی حلقوں نے بتائیں۔ان ذرائع کے مطابق چودھری نثار اپنا موقف ایک وضاحتی بیان میں دیں گے۔واضح رہے کہ نجی ٹی وی سے گفتگو میں ن لیگ کے سینئر رہنما جاوید لطیف نے چوہدری نثارکے حوالے سے انکشاف کیا۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں استفسار کرتے ہوئے کہا کہ کیا دھرنے کے دنوں میں تھانے سے ملزمان میں نے چھڑوائے تھے یا عمران خان نے چھڑوائے تھی اس پر پروگرام کے میزبان نے سوال کیا کہ اس وقت حکومت کس کی تھی وزیر داخلہ کس کا تھا تھانے سے ملزمان چھڑانے والے کو کیوں نہیں پکڑا جواب میں جاوید لطیف نے کہا کہ حکومت نواز شریف کی اور وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان تھے، ملزمان چھڑانے والے کو کیوں نہیں پکڑا پر میں عرض کروں گا، جس کی آپ مجھے اجازت دیں۔
ن لیگی رہنما نے کہا کہ دھرنے کے دوران پی ٹی وی پر حملہ ہوا، وزیراعظم ہائوس پر حملہ ہوا، اس دوران ریڈ زون میں دھرنے کے شرکاء کو داخلے کی اجازت دینا اور پتا نہیں کس کس کی فون کال ریسو کرنا، اس سارے معاملے میں کون سہولت کار بنا ہوا تھا۔جاوید لطیف نے کہا کہ آج وہ وزیرداخلہ کہاں ہیں جس پر پروگرام کے میزبان نے کہا کہ آپ کہہ رہے ہیں کہ ن لیگ کا وزیرداخلہ تحریک انصاف کا سہولت کار تھا جس پر ن لیگی رہنما نے کہا کہ ہاں میں کہہ رہا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.